برازیل کا فلسطین کی حمایت میں زبردست اقدام، آزاد تجارتی معاہدے کی منظوری دیدی

0

جنوبی امریکہ کے تجارتی بلاک ’مرکوسور‘ اور فلسطینی اتھارٹی کے درمیان 2011 میں ہونے والا معاہدہ توثیق کا منتظر تھا

جنوبی امریکہ کے تجارتی بلاک ’مرکوسور‘ اور فلسطینی اتھارٹی کے درمیان 2011 میں ہونے والا معاہدہ توثیق کا منتظر تھا

برازیلیہ: برازیل نے فلسطینی عوام سے اظہار یکجہتی کےلیے 13 سال بعد فلسطینی اتھارٹی کے ساتھ آزاد تجارتی معاہدے کی توثیق کردی۔

بین الاقوامی خبر رساں ادارے روئٹرز کے مطابق 2011 میں جنوبی امریکہ کے تجارتی بلاک ’مرکوسور‘ اور فلسطینی اتھارٹی کے درمیان آزاد تجارتی معاہدہ طے پایا تھا لیکن تاحال اس پر عمل درآمد مؤخر تھا۔ مرکوسور جنوبی امریکی تجارتی بلاک ہے جس میں ارجنٹائن، برازیل، پیراگوئے اور یوراگوئے شامل ہیں۔

برازیل کی وزارت خارجہ نے اس معاہدے کو نافذ کرتے ہوئے اپنے بیان میں کہا کہ یہ معاہدہ فلسطینی ریاست کو اقتصادی طور پر مضبوط کرنے کےلیے ایک ٹھوس قدم ہے۔ یہ ریاست ایسی ہوگی جو اپنے پڑوسیوں کے ساتھ پرامن اور ہم آہنگی سے قائم رہ سکے گی۔

مرکوسر کے دیگر اراکین ارجنٹائن، یوراگوئے اور پیراگوئے کی وزارت خارجہ نے تاحال اس معاہدے کی توثیق نہیں کی۔ واضح رہے کہ برازیل نے فلسطینی ریاست کو تسلیم کیا ہے اور 2010 سے برازیل کے دارالحکومت میں فلسطینی سفارت خانہ قائم ہے۔

برازیلیا میں فلسطینی سفیر ابراہیم ال زیبن نے فیصلے کو جرات مندانہ، مددگار اور بروقت قرار دیتے ہوئے کہا کہ یہ فلسطین میں امن کی حمایت کا مؤثر طریقہ ہے، جس سے مرکوسور ممالک کے ساتھ فلسطینی تجارت میں اضافہ ہوگا، جس کا موجودہ حجم سالانہ 32 ملین ڈالر ہے۔


%d8%a8%d8%b1%d8%a7%d8%b2%db%8c%d9%84-%da%a9%d8%a7-%d9%81%d9%84%d8%b3%d8%b7%db%8c%d9%86-%da%a9%db%8c-%d8%ad%d9%85%d8%a7%db%8c%d8%aa-%d9%85%db%8c%da%ba-%d8%b2%d8%a8%d8%b1%d8%af%d8%b3%d8%aa-%d8%a7%d9%82

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *